Literature

Afsana Woh
Literature

وہ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

محکمہ پولیس کی جانب سے شہریوں کی خاطر اپنی خوشیوں سے لے کر جان تک قربان دینے کی مختصر داستان، صاحبان اقتدار کے لئے لمحہ فکریہ، عنایت عادل کے قلم سے۔۔۔ سورج کے سوا نیزے آنے کی مثال کی عملی شکل شدت سے محسوس کی جا سکتی تھی۔ جھلسا دینے […]

PC: Sufyan Aftab
Literature

زباں دراز

 تحریر : شبہ طراز ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اور تھا ہی کیا میرے پاس۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اپنے غم و غصے کے اظہار کے لیے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ وہی جو ہر گھر دار عورت کے پاس ہوتا ہے۔۔۔۔۔۔۔ گز بھر کی لمبی زبان ۔۔۔۔۔۔۔ اور کیوں نہ ہو ، جب کسی ہنر کو ہنر نہ مانا جائے ، کسی […]

Bob's tea house
Literature

بوب کا چائے خانہ

تحریر : اسد محمد خان وہ اپنے  تیوروں  میں  جزائرِ  انڈمان  جیسی  کوئی  جگہ  تھی  سیکیورٹی  اور  تجارت  کے  اعتبار  سے  منظبط  اور  سب  معاملوں میں بالکل  غیر  منظم ، بلکہ ‘ چھوڑ  دی  گئی  جگہ ۔ میں  اور  میرا  میزبان  پہلی  بار  شہر  کی   سیر  کو  نکلے  تھے ۔ […]

Image: Sufyan Aftab
Literature

یہ بے خواب

یہ بے خواب نیابتوں والی نادر راتیں غوثوں ، کتبوں ، ابدالوں کی چادر راتیں  سارے جہان پر قادر راتیں کشف وشہود کے دروازے پر دستک زن ہیں لات و منات خوف شکن ہیں خوابوں کے کمخواب میں دب کے بندے یکتا رب کے اپنے جوہڑ بھی کھوچکے ہیں کب […]

ماس خور مانوش
Literature

ماس خور مانوش

پختہ تر ہو کے ابھی خام ہے ابنِ آدم عقل مریخ سے ہو آئی ہے کیا بگڑا ہے؟ میں کہ انسان ہوں جنگل میں ابھی رہتا ہوں یعنی تاریکی کی اقلیم کا باسی ہوں انسان میرا اسم ہے کمزور میرے لقمے ہیں روشنی عصرِ مہذب کی ہے بیکار کہ فرعون […]

کمرشل صوفیوں کے نام قلندری لاہوری کا پیغام
Literature

کمرشل صوفیوں کے نام قلندری لاہوری کا پیغام

گھر سے بن ٹھن کے صوفیہ نکلے لے  کے  عرشوں  کا  تخلیہ نکلے دل  میں  شوقِ  زرِ  مطلب     لے آستانوں   سے  روسیہ      نکلے بے وسیلہ  خدا  کے  طالب  ہیں تارکِ  طورِ   چشتیہ        نکلے  بھول  کر  حب  ذاتِ اولیٰ   کو دہر […]

ناصر کاظمی کی شعری بصیرتیں……..تحریر پروفیسر ڈاکٹر سعادت سعید
Literature

ناصر کاظمی کی شعری بصیرتیں……..تحریر پروفیسر ڈاکٹر سعادت سعید

ناصر کاظمی نے جس زمانے میں شعور کی آنکھ کھولی اس میں ترقی پسندی یا مارکسی آئیڈیالوجی کے زیر اثر لکھے جانے والے ادب کو وسیع پیمانے پر سند قبولیت حاصل تھی۔ عصری فلسفوں کی موشگافیوں کا دور دورہ تھا۔ میراجی نے سوریلی شاعری اورنئی شعری تکنیکوں کو پر کشش جانا […]